خبریں

  • لائین آٖف کنٹرول پربھارتی جارحیت کے خلاف کوٹلی میں امن مارچ خودارادیت کی حمایت میں مختلف عبارات درج تھیں۔مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے خواجہ عطا محی دین،ڈاکٹرتوقیرگیلانی،اصغرسیٹھی ، لیاقت حیات نے سیزفائر کی خلاف ورزیوں اور آزادکشمیرکے مختلف علاقوں میں سویلین آبادی پربھارتی جارحیت کی شدید مذمت کی۔جے کے ایل ایف کے سربراہ ڈاکٹرتوقیرگیلانی نے کہا کہ کشمیری عوام تنازعہ کشمیر کے بنیادی فریق ہیں۔دونوں قابض ممالک اپنی افواج کو نکال کرکشمیریوں کو امن سے رہنے کا موقع دیں۔معروف سیاسی رہنما خواجہ عطا محی دین نے کہاکہ ھندوستان کشمیرکے اندر بڑے پیمانے پر انسانی حقوق کی پامالی کے بعد اب بزدلی پر اتر آیا ہے اور کنٹرول لائین پر نہتے لوگوں کونشانہ بنارہا ہے۔اصغرسیٹھی اور لیاقت حیات نے کہا کہ حکومت پاکستان معذرت خواہانہ رویہ ...
    Posted Aug 29, 2013, 2:40 PM by PFP Admin
  • وادی نیلم :خواتین کنٹرول لائین پر بھارتی جارحیت کے خلاف سڑکوں پر نکل آئیں امن کے لئے بینرز اور پلے کارڈ ز اٹھائے خواتین نے اس موقع پر عالمی دنیا سے بھی مطالبہ کیا کہ کنٹرول لائن پر گذشتہ کشیدگی کی وجہ سے چودہ سال تک وادی نیلم میں سکول نہیں کھولےجا سکے جس کی وجہ سے ایک پوری نسل ان پڑھ جوان ہو گئی ہے اگر باقی دنیا کے بچوں کو تعلیم کا حق تسلیم کیا گیا ہے تو کشمیریوں کے بچوں کو بھی یہ حق دیا جائے اور ہر اس اقدام سے احتراز کیا جائے جس سے کنٹرول لائن پر کشیدگی کو ہوا ملتی ہواس موقع پرخواتین کو یقین دلاتے ہوئے مقامی فوجی کمانڈر کا کہنا تھا کہ ان کا مطالبہ حکومت پاکستان تک پہنچا دیا جائے گا تاہم اگر بھارت ...
    Posted Mar 16, 2014, 4:41 PM by PFP Admin
  • سر کے بال کاٹ کرعورت پرتشدد کا نشانہ اور ناک کاٹنے کی کوشش سسرال والوں نے تشدد کر نے کے بعد مجھے ایک گاڑی میں بند کر کے اپنے میکے بھیج دیا میں اب خاوند کے ساتھ نہیں رہنا چاہتی اور مجھے اپنی جان کا خطرہ ہے ۔ اس دوران انسانی حقوق کی تنظیم جموں کشمیر ہیومن رائٹس موومنٹ کے صدر راجہ منیر اور پریس فار پیس کی ڈپٹی کو آرڈینیٹر روبینہ ناز نے کہا کہ ہم اس واقعے کی پُر زور مذمت کر تے ہیں اور تہمینہ پر تشدد کر نے والے عبدالغفور اور عبدالجبار کو فوری طور پر قانون کے حوالے کیا جائے ۔ اور مظلومہ کو فوری طور پر انصاف دلایا جائے ۔ انہوں نے آئی جی آزاد کشمیر اور چیف جسٹس آزاد کشمیر سے مطالبہ کیا کہ وہ اس واقع میں ...
    Posted Mar 24, 2013, 3:40 PM by PFP Admin
  • پاکستانی کشمیر میں توانائی کے منصوبے اس کے لیے ورلڈ بینک ، اسلامک ڈوپلمنٹ بینک اور ایشین ڈویلپمنٹ بینک نے قرض مہیا کیا ہے۔ منصوبے کی تعمیر کرنے والی کمپنی کے منیجر ایچ ایس سی آفتاب عالم نے وائس آف امریکہ کو بتایا کہ یہ آب وہوا دوست منصوبہ ہے جس کی تعمیر سے سالانہ تین سو ٹن مضرصحت گیس کاربن ڈائی آکسائیڈ کے اخراج میں کمی آئے گی اور اس منصوبے سے مظفرآباد شہر کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی اور دو پارکوں کی تعمیر بھی کی جائے گی۔پاکستانی کشمیر کے پرائیویٹ پاور سیل کے ڈائریکٹر جنرل فاروق حیدر گگرو نے وائس آف امریکہ کو بتایا کہ میر پور میں پرائیویٹ سیکٹر میں تعمیر ہونے والا 80 میگا واٹ کا ایک منصوبہ مکمل بھی ...
    Posted Mar 21, 2013, 3:20 PM by PFP Admin
  • عورتوں کے گلہ کاٹنے،قتل کرنے کے واقعات قابل مذمت ہیں۔فریال بٹ اعلی عدلیہ عورتوں کے خلاف بڑھتے ہوئے جرائم پر سوموٹو ایکشن لے کر مظلوم خواتین کے ورثاء کو انصاف فراہم کرے۔فریال بٹ انھوں نے مطالبہ کیاکہ پولیس ملزمان کو جلداز جلد گرفتارکر کے باغ، ہجیرہ، پلندری اور دیگر علاقوں میں عورتوں کے ٖخلاف سنگین جرائم اور قانون شکنی کے مرتکب ملزمان کو گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دے۔ہجیرہ میں ایک نہتی عورت کو سوتے میں گلہ کاٹ کر ہلاک کرنے کاواقعہ قابل مذمت اور شرمناک ہے۔ انھوں نے مطالبہ کیا ہے کہ چیف جسٹس ہائی کورٹ عورتوں کے خلاف بڑھتے ہوئے جرائم کے خاتمے کے لیے اپنا کردار ادا کرے اور سوموٹو ایکشن لے کر مظلوم خواتین کے ورثاء کو انصاف فراہم کرے۔ باغ نبیلہ قتل کیس پولیس ...
    Posted Mar 21, 2013, 11:43 AM by PFP Admin
  • باغ کی بہاریں کب لوٹیں گی سڑکیں خستہ حالی کا شکار ہیں، باغ میں موجود ادارے جہاں بیٹھے کمیشن خور قومی خزانے کو چونا لگانے میں مصروف ہیں ان اداروں کی کار کردگی صفر ہے ایرا،سیرا کی فائلوں،ویب سائٹس پر دنیا کی نظروں میں دھول جھونکنے کیلئے باغ کی تعمیر نو و بحالی کا کام سو فیصد مکمل دکھایا تو جا رہا ہے مگر اصل حقیقت بڑی بھیانک اور افسوس ناک ہے کہتے ہیں ،،جس ملک و قوم کے اداروں اور افراد میں رشوت،کمیشن اور سود خوری سرایت کر جائے اس قوم اور ملک کی تباہی و بربادی کو کوئی نہیں روک سکتا ،،بدقسمتی سے آج ہم بھی اسی ڈگر پر چل نکلے ہیں پتا نہیں ہمارا انجام کتنا بھیانک اور کتنا خوفناک ...
    Posted Mar 10, 2013, 3:36 PM by PFP Admin
  • باغ میں صحت عامہ کی بگڑتی ہوئی صورتحال ذرا ان صحت عامہ کے مراکز کی خبر تو لیجئے جہاں آپ کے نام کی تختیاں لوگوں کی بے بسی کی کہانیاں بیان کرتے آپ کو نظر آئیں گی بہت سارے مراکز ابھی بھی ڈاکٹرز،سٹاف، لیڈی ڈاکٹرز،نرسز،ادویات اور عمارات کے منتظر ہیں سردار قمر الزمان صاحب باغ کے عوام نے آپ کو اس لئے منتخب کیا تھا کیونکہ آپ ایک انقلابی سوچ و فکر رکھنے والے عوامی لیڈر ہیں عوام کے ساتھ آپ کا براہ راست رابطہ اور لگاؤ ہے مگر افسوس سے کہنا پڑ رہا ہے کہ آپ کی وزارت کے ناک تلے سرکاری ہسپتالوں میں غریب مریضوں کے ساتھ جو انسانیت سوز اور بھیانک کھیل کھیلا جا رہا ہے آپ اس سے ابھی تک بے ...
    Posted Mar 4, 2013, 10:36 AM by PFP Admin
  • مادری زبان،پس منظر و پیش منظر مادری زبان کی تعلیم سے خود زبان کی ترویج واشاعت میں مددملتی ہے ،زبان کی آبیاری ہوتی ہے ،نیاخون داخل ہوتا ہے اورپرانا خون جلتارہتاہے جس سے صحت بخش اثرات اس زبان پر مرتب ہوتے ہیں۔انسانی معاشرہ ہمیشہ سے ارتقاء پزیر رہا ہے چنانچہ مادری زبان اگر ذریعہ تعلیم ہو تو انسانی ارتقاء کے ساتھ ساتھ اس علاقے کی مادری زبان بھی ارتقاء پزیر رہتی ہے،نئے نئے محاورے اور روزمرے متعارف ہوتے ہیں ،نیا ادب تخلیق ہوتا ہے،استعمال میں آنے والی چیزوں کے نئے نئے نام اس زبان کا حصہ بنتے رہتے ہیں۔جس طرح قوموں کے درمیان اور تہذیبوں اور مذاہب کے درمیان جنگ رہتی ہے اسی طرح زبانوں کے درمیان بھی ہمیشہ سے غیراعلانیہ جنگ ...
    Posted Feb 24, 2013, 4:16 PM by PFP Admin
  • کشن گنگا پاور پاور پراجیکٹ : عالمی عدالت انصاف دونوں اداروں نے مشترکہ طور پر عالمی عدالت انصاف سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنے فیصلے پر نظر ثانی کریں اور زمینی و سائنسی حقائق کو سامنے رکھ کر فیصلہ کیا جائے تاکہ ریاست جموں و کشمیر کو بڑی ماحولیاتی تباہی سے بچایا جا سکے۔ پریس فار پیس اور کسان فورم کے عہدیداروں نے خبردار کیا ہے کہ اگر اس فیصلہ پر نظر ثانی نہ کی گئی اور حکومت پاکستان کی جانب سے موثر طریقے سے اس فیصلہ کے خلاف اپیل نہ کی گئی تو دونوں ادارے سول سوسائٹی کے ذریعے وادی نیلم اور آزاد کشمیر سمیت ملک گیر احتجاجی مہم شروع کریں گے ۔پریس کانفرنس میں کہا گیا ہے کہ عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ زمینی اور ...
    Posted Feb 24, 2013, 10:19 AM by PFP Admin
  • زمین پھٹی نہ آسمان گرا ذرائع سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ لڑکی کے والد نے تھانہ باغ میں قانونی کارروائی کے لیے درخواست بھی دے رکھی ہے مگر تاحال کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ لڑکی کی نعش پر تشد د کے واضح نشانات بھی موجود تھے۔اس زیادتی کے خلاف لڑکی کے ورثاء نے انتظامیہ اور میڈیا کو خطوط بھی جاری کیے جس میں انہوں نے اس زیادتی کے ازالے اور انصاف کی فراہمی کا مطالبہ بھی کیا ہے۔ انسانی حقوق کی تنظیموں نے اس واقعہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے واقعے کی تحقیقات اور متاثرہ خاندان کو انصاف کی فراہمی ، مذکورہ لڑکی کی قبر کشائی کر کے پوسٹ مارٹم کر کے اصل حقائق ...
    Posted Feb 10, 2013, 1:36 PM by PFP Admin
  • پہاڑی زبان کے ساتھ امتیازی سلوک پر احتجاج لیکن سری نگر اور جمو ں کی راج دہانیوں میں بیٹھے پہاڑی دشمن پالیسو ں پر گامزن ہیں۔اس نمائندہ اجلاس میں پہاڑی سٹوڈینس یونین کے رہنماؤں عبدالقدیر،سیدمغل،راجو شرما، وندھا گیتا، مدھور گپتا، صدر یوتھ فےٖڈریشن ویسم مرزا، صدر پہاڑی ایکشن کیمٹی جاوید مغل،سنیررہنماؤں شیل دتا، اشوانی کمار، نصیب سنگھ اور دیگر مقررین نے خطاب کیا۔ یاد رہے کہ بھارت میں آئینی طور پر پسماندہ طبقات کو شیڈولڈ ذاتوں میں شامل کرکے انھیں ملازمتوںِ،تعلیمی اداروں اور ترقیاتی منصوبوں میں کوٹہ اور دیگر رعاتیں حاصل ہیں اور کشمیر میں بکروالوں اور گوجر قبائل کو یہ درجہ حاصل ہے۔پیپلز پہاڑی موومنٹ کے سربراہ شہباز خان اورپہاڑی فورم کے جنرل سیکرٹری وجے کوچرنے کہاکہ حکومت پہاڑی کیمونٹی ...
    Posted Feb 7, 2013, 5:07 PM by PFP Admin
Showing posts 1 - 11 of 31. View more »

مضامین, مراسلے ,شاعری

  • کیا پولیس کے لئے بھی قانون ہے دلچسپ بات یہ ہے کہ قانون کی رٹ لگانے والوں نے اس کیس میں لاقانونیت کی ایک ایسی مثال قائم کی جو تاریخ میں اس سے قبل نہیں ملتی کہ مستغیث خود ہی تفتیش کر رہا ہے۔ جہاں مدعی ہی منصف ہو وہاں انصاف کی توقع کیسے کی جا سکتی ہے؟ کس قدر لاقانونیت ہے کہ چوری کے اس کیس میں مستغیث مقدمہ ASIجاوید عباسی خود ہی اس کیس کی تفتیش بھی جاری رکھی ہوئی ہے جو پولیس کی تاریخ میں لاقانونیت کی ایک واضح مثال ہے۔ قانونی ماہرین کے مطابق زیر بحث مقدمہ پولیس کے آمرانہ اختیارات کی ایک بھیانک مثال بنتا دکھائی دیتا ہے۔ کیوں کہ یہ ایک ملزم کا قانونی حق ہے کہ اس کے خلاف ...
    Posted Apr 6, 2014, 2:13 PM by PFP Admin
  • کاش ۔۔۔۔میں بھی رئیوونڈ کا مور ہوتا! وہاں کے مکینوں کا واحدذریعہ معاش مال مویشی تھے نہ صرف انسان بلکہ مال مویشی بھی بدترین قحط کا شکار ہوئے میں کئی دن تک سوچتی رہی کہ اس موضوع پر لکھا جائے لیکن قارئین کرام! اگر سچ کہوں تو ان دل دہلا دینے والے مناظر کو دیکھ کر حوصلہ ہی نہ ہوا کہ قلم اٹھانے کی جسارت کر سکوں ہر لمحہ یہی سوال دل اور ذہن پر کچوکے لگاتا رہا کہ بحیثیت قوم ہم بے حسی کی اس انتہا پر پہنچ چکے کہ محسوس ہوتا ہے کہ ضمیر نام کی کوئی چیز ہمارے اندر نہیں رہی اور حکمرانوں کے توکیا کہنے؟ وزیر اعلیٰ سندھ قائم علی شاہ کا تعلق سید گرانے سے ہے جو حضور اکرمؐ کی آل میں ...
    Posted Mar 25, 2014, 11:14 AM by PFP Admin
  • یونان: عظیم ثقافتی ورثے کا امیں یونان کا موجودہ دستور1975میں منظور کیا گیا،اس سے قبل 1967سے 1974تک یہاں فوجی آمریت مسلط رہی۔1986ء میں اس دستور میں مزید ترامیم کی گئیں اور صدر کے اختیارات کا مزید تعین کیاگیا۔اب وہاں کے صدر کے پاس وسیع اختیارات ہیں اور صدر پارلیمنٹ سے پانچ پانچ سال کی دو مدتوں تک منتخب ہوسکتا ہے۔جبکہ وزیراعظم کی مدت انتخاب چار سال ہوتی ہے۔یہاں کی سیاسی پارٹیاں زیادہ تر شخصیتوں کے زیراثر ہوتی ہیں۔مملکت کو تیرہ انتظامی حصوں میں تقسیم کیاہواہے لیکن حکومت کا انتظام زیادہ تر مرکزیت کاہی محتاج ہے۔1974ء تک فوج بھی ملکی سیاسی معاملات میں دخیل رہی ہے لیکن اب ایسا نہیں ہے یا بہت کم ہے۔یونان میں جی ڈی پی ...
    Posted Mar 24, 2014, 2:12 PM by PFP Admin
  • حفاظتی دعوے ۔۔۔ اور لہو لہو قانون کی راہداریاں ///تحریر :۔ راحت فاروق ایڈووکیٹ /// یہ حادثہ حکومت اور سیکیورٹی اداروں کے لئے لمحہ فکریہ ہے کہ کون لوگ ہیں جو قانونی اداروں کو کمزور کرنے کے درپے ہیں، آج مختلف وجوہات اور تاویلیں پیش کی جا رہی ہیں کہ کچھ گرفتار دہشت گردوں کی عدالت میں پیشی تھی جس بناء پر یہ آپریشن کیا گیا، اسی طرح ایڈیشنل سیشن جج صاحب رفاقت اعوان شہید کے حوالے سے کہا جا رہا ہے کہ سابق صدر جنرل مشرف کوایک کیس میں ضمانت پر رہا کئے جانے کی وجہ سے انہیں ٹارگٹ کیا گیا یہ انتہائی تشویشناک صورتحال ہے کہ عدلیہ کو آزادانہ طور پر فیصلہ کرنے کی بھیانک انداز سے سزا دی جائے ، ایسی صورت میں انصاف کی فراہمی ممکن نہیں ہو ...
    Posted Mar 16, 2014, 4:35 PM by PFP Admin
  • نگارش قلم ( لولی پاپ ) تحریر: سیّد عمران حمید گیلانی ///جھوٹے زمینوں کے کیسز میں ا لجھانے کا کیا رواج ابھی تک ہمارے معاشرے میں قائم نہیں۔۔۔۔۔؟ یہاں تو آج بھی دفاتر کے اندر پٹواری بادشاہ یا کلرک کا راج قائم ہے اور ہوتو وہی ہے جو یہ چاہیں گے متاثرین ہوں یا حقدار وہ لاکھ کوشش و سعی کر لیں ان کا کام اس وقت تک نہیں بن پاتا جب تک دفاتر کے اندر براجمان ان مگر مچھوں کی خدمت خاطر نہ کر لیں اور بھاری نذر نیاز اور نذرانوں سے ان کو رام نہ کر لیں۔۔۔۔! ورنہ وہی ہو گا جو آج سے قبل ہوتا رہا ہے کل آنا ،آج صاحب مصروف ہیں یا دفتر حاضر نہیں ۔آپ فکر نہ کریں کام ...
    Posted Mar 16, 2014, 4:23 PM by PFP Admin
  • زمین:ایک امانت (22اپریل عالمی یوم الارض کے حوالے سے خصوصی تحریر)ڈاکٹر ساجد خاکوانی///یورپی سیکولرازم کی زمین دشمنی یہیں ختم نہیں ہو جاتی بلکہ منافقت اور کذب و فساد کے مرقع ’’سیکولرازم‘‘نے اپنی اس کارستانی پرپردہ ڈالنے کے لیے انتہائی چابک دستی سے ’’آلودگی‘‘کو ایک معاشی ہتھیار بناکر اس کاسارا نزلہ ایشیاپر اتارنے کی کوشش کی ہے۔حالانکہ کہ ایشیا کی زمین آج بھی یورپ اور امریکہ کی زمین سے زیادہ صاف اور صحت بخش ہے۔یہ ایک تاریخی حقیقت ہے کہ غیرفطری نظریہ زندگی کے باعث یورپ اور امریکہ میں صدیوں سے دو رویے بالکل متضاد سمت میں رواں دواں ہیں،ایک طرف توآبادی میں نمایاں کمی واقع ہو رہی ہے اور عمارتوں اور سڑکوں کے ...
    Posted Mar 16, 2014, 4:10 PM by PFP Admin
  • عکس خیال تحریر: راحت فاروق ایڈووکیٹ///معاشرتی رویوں کی آگ میں جھلسنے والی مظلوم  عورت کئی بار مرتی اور سانسوں کی گنتی پوری کرنے کیلئے دوبارہ زندہ ہونے پر مجبور ہوتی ہے اور اپنے ان مسائل کے ساتھ سمجھوتہ کرنے کو ترجیح دیتی ہےالمیہ یہ ہے کہ کل آبادی کا 52% خواتین پر مشتمل ہے جبکہ 5%سے بھی کم عورتیں زمین پر مالکانہ حقوق رکھتی ہیں عورت فاؤنڈیشن کی جانب سے 2012کی عورتوں کے خلاف تشدد رپورٹ کے مطابق دیہی علاقوں میں گھریلو تشدد کے 25.5%واقعات اور تیزاب پھیکنے کے 26.51%واقعات درج ہوئے جوسر اقتدار طبقات اور عورتوں کے حقوق کی تنظیموں کیلئے لمحہ فکریہ اور سوالیہ نشان ہیں۔محض قانون سازی مسئلے کا حل نہیں ...
    Posted Mar 16, 2014, 3:46 PM by PFP Admin
  • پاکستان کے آمدہ الیکشن۔۔۔تھرڈ آپشن پاکستان تحریک انصاف نے اپنے انٹرا پارٹی انتخابات کامیابی سے مکمل کرکے موروثیت کے منہ پر طمانچہ رسید کیا ہے۔پشاور میں ایک اور کامیاب جلسہ منعقد کرکے ان ناقدین کو سوچنے پر مجبور کردیا ہے۔ جو یہ سمجھتے تھے کہ سونامی ماند پڑسکتی ہے ۔23 مارچ کا جلسہ تحریک انصاف کو صحیح معنوں میں ایک متبادل تیسری سیاسی قوت کے طورپر منظر عام پر لے آئیگا۔ پاکستانی عوام کے پاس آزادی ہے جس کو چاہیں ووٹ دیں مگر میری ذاتی رائے میں مسلم لیگ(ن) اور پیپلز پارٹی میں کوئی فرق نہیں ہے جو لوگ ابھی بھی ان روائتی سیاسی جماعتوں کوووٹ دینے کے حق میں ہیں جو گزشتہ دو دہائیوں سے بھی زائد اقتدار میں ہیں اور جن ...
    Posted Mar 21, 2013, 3:32 PM by PFP Admin
  • مقبول بٹ سے افضل گوروتک بھارتی سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں یہ بات تسلیم کی ہے کہ افضل گورو کے خلاف کوئی ٹھوس شہادتیں یا ثبوت موجود نہیں تھے اور انہیں محض’’ قرینی شہاتوں Circumstantial Evidences‘‘کی بناء پر بھارتی عوام کے ’’اجتماعی شعور ‘‘کی تسکین کے لئے پھانسی کی سزاء سنائی جاتی ہے ۔مگر جس’’اجتماعی شعور‘‘ کی تسکین کے نام پر ایک بے گناہ کا خون بہایا گیا آج وہی اجتماعی شعور اس فیصلے پر مختلف سوالات اٹھا رہا ہے ۔ ’’ارون دھتی رائے‘‘ کی طرح کئی دیگر بھارتی دانشور ، وکلاء اور انسانی حقوق کے کارکنان اسے عدالتی قتل سے تشبیہ دے رہے ہیں ۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ مقبول بٹ اور افضل گورو کو سزائے موت سنائے جانے کے مقدمات میں ...
    Posted Mar 13, 2013, 5:21 PM by PFP Admin
  • ظالم حکمرانوں کے تازیانے کب تک غریب عوام سہتے رہیں گئے ؟ کسی کو کچھ پتا نہیں کہ کیا ہورہا ہے اور کب کیا ہو جائے،بیس کیمپ کے ظالم اور کرپٹ حکمران،سیاستدان،ادارے اور ان میں بیٹھے بد دیانت افراد قومی خزانے کو شیر مادر سمجھ کر لوٹ رہے ہیں ،اداروں کو لوٹ کھسوٹ کر ملک کی معاشی جڑیں کھوکھلی کر رہے ہیں مفاد پرستی کے اس گھن چکر میں یہ بد دیانت ،چور لٹیرے ایسے مگن ہیں کہ ان کو کسی کی پروا نہیں جس جمہوریت کا دعویٰ لیکر وہ عوام سے ووٹ لینے ان کے پاس گئے تھے اور عوام نے ان کی خود فریبی کے باوجود انہیں اپنا منتخب کر کے اسمبلیوں میں بھیجا تھا آج وہی حکمران،سیاستدان،بیوروکریٹ،اقتدار ملنے کے بعد یوں مست ہوگئے ...
    Posted Mar 4, 2013, 10:55 AM by PFP Admin
  • مراکش ،اسلامی تہذیب کا اہم مرکز مراکشکے آئین کے مطابق بادشاہت اور جمہوریت مل کریہاں کا سیاسی نظام چلاتے ہیں۔مجلس مستشرین یہاں کا ایوان بالا ہے اور مجلس ناواب یہاں کا ایوان زیریں ہے۔وزیراعظم حکومت کا انتظامی سربراہ ہوتاہے اورکابینہ اسکی معاونت کرتی ہے۔آئین ،قانون اور بہت ساری سیاسی پارٹیاں جن میں سوشلسٹ ،لبرل اور اسلامی فکر کی حامل پارٹیاں بھی ہیںیہاں کے سیاسی کلچر کاایک حصہ ہیں۔بادشاہ اس سارے نظام کا اجتماعی ذمہ دار ہے،اسی کی منظوری سے وزیر،کابینہ اور وزیراعظم بنتے ہیں اور بادشاہ کے پاس ہی یہ اختیارات ہیں کہ وہ انہیں تحلیل کر سکے۔مقامی حکومتوں کا نظام وزارت داخلہ کے تحت کام کرتا ہے ،ملک کو سولہ بڑے بڑے انتظامی حصوں میں تقسیم کیاہواہے ...
    Posted Mar 4, 2013, 10:48 AM by PFP Admin
  • ابن بطوطہ مالدیپ،بنگال اور آسام کی سیاحت اور اسکے حالات بھی انہوں نے اپنی کتاب میں تفصیل سے لکھے ہیں۔ان ملکوں میں وہ سیاست میں بھی دخیل رہے،شاہی خاندان میں شادی بھی کی اور جنگوں میں بھی حصہ لیتے رہے۔ایک عرصے کے بعد سفر چین کا شوق انہیں چرایا،وہ ’’زیتان‘‘ کی بندرگاہ پر لنگرانداز ہوئے اور وہاں کے مقامی مسلمان بادشاہ نے انہیں درائی راستے سے چین کی سیر کے لیے مددفراہم کی اور وہ اس وقت کے بیجنگ کا بھی نظارہ کر آئے۔وہاں سے وہ سمارٹا،مالابار اور آبنائے فارس کے راستے واپس بغداد پہنچے۔بغداد سے شام اور پھر مصر سے ہوتے ہوئے 1348ء میں انہوں نے اپنی زندگی کا آخری حج اداکیاجس کے ...
    Posted Feb 24, 2013, 4:07 PM by PFP Admin
Showing posts 1 - 12 of 38. View more »